امریکی صدر کی مصنوعی ذہانت پر تحفظات سے متعلق گوگل اور مائیکروسافٹ کے سی ای اوز سے ملاقات

14

واشنگٹن (این این آئی)امریکی صدر جو بائیڈن نے وائٹ ہائوس میں مصنوعی ذہانت متعلق پرگوگل اور مائیکروسافٹ کمپنیوں کے سی ای اوز سے ملاقات کی۔غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ملاقات کے موقع پر امریکی صدر نے مصنوعی ذہانت کی دونوں بڑی کمپنیوں کے سی ای اوز سے عالمی سطح پر حکومتوں اور قانون سازوں کیلئے مصنوعی ذہانت سے جڑے خطرات اور ممکنہ حفاظتی تدابیر سے متعلق بات چیت کی۔

بائیڈن کی ٹیکنالوجی جائنٹس کے ساتھ ہونے والی میٹنگ میں شریک امریکی نائب صدر کاملا ہیریس نے اپنے بیان میں بتایا کہ سی ای اوز کو بتایا گیا ہے کہ وہ اپنی قانونی ذمہ داریوں کو پورا کریں اور صارفین کی پرائیویسی اور سیفٹی کو یقینی بنائیں۔اپنے بیان میں انہوں نے مزید کہا کہ صدر نے سی ای اوز کو یقین دلایا ہے کہ مصنوعی ذہانت سے متعلق نئے قوانین کیلئے ان کی انتظامیہ ہر ممکن تعاون کرنے کیلئے تیار ہے۔میٹنگ کے بعد اوپن اے آئی کے سیم الٹمین کا کہنا تھا کہ وائٹ ہائوس نئی ٹیکنالوجی کو پورے طریقے سے سمجھنا چاہتا ہے جو کہ ایک اچھا قدم ہے، وہ مصنوعی ذہانت سے متعلق قانون سازی کرنا چاہتے ہیں اور یہ ایک ایسی چیز ہے جس کا ہم با آسانی حل تلاش کر سکتے ہیں۔ وائٹ ہائوس حکام کا کہنا تھا کہ میٹنگ سے قبل صدر کو مصنوعی ذہانت سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی گئی تھی جبکہ انہوں نے خود بھی چیٹ جی پی ٹی کو استعمال کر کے دیکھا تھا۔امریکی صدر کی جانب سے بلائی گئی میٹنگ میں گوگل کے سی ای او سندر پچائی، مائیکروسافٹ کے ستیا نڈیلا، اوپن اے آئی کے سیم الٹمین، نائب صدر کاملا ہیریس، بائڈن کے چیف آف اسٹاف سمیت نیشنل سکیورٹی ایڈوائیز رجیک سلویان سمیت دیگر حکام نے شرکت کی۔واضح رہے کہ بائیڈن انتظامیہ نے ملک بھر میں نیشنل سائنس فانڈیشن کے ذریعے مصنوعی ذہانت کے 7 نئے ادارے کھولنے کیلئے 140 ملین ڈالر سرمایہ کاری کا بھی اعلان کیا ہے۔
٭٭٭٭

موضوعات:امریکی صدر

خودکش ایٹمی دھماکے

عمران خان کی پرویز خٹک اور صدر عارف علوی سے ناراضگی 18 مارچ کو سٹارٹ ہوئی‘ اسلام آباد کی ایڈیشنل سیشن کورٹ نے عمران خان کو18 مارچ کوطلب کر رکھا تھا‘ عمران خان اس دن بھی عدالت نہیں جانا چاہتے تھے لیکن صدر عارف علوی اور پرویز خٹک نے انہیں راضی کر لیا‘ ان دونوں کا خیال تھا عمران خان ….مزید پڑھئے‎

عمران خان کی پرویز خٹک اور صدر عارف علوی سے ناراضگی 18 مارچ کو سٹارٹ ہوئی‘ اسلام آباد کی ایڈیشنل سیشن کورٹ نے عمران خان کو18 مارچ کوطلب کر رکھا تھا‘ عمران خان اس دن بھی عدالت نہیں جانا چاہتے تھے لیکن صدر عارف علوی اور پرویز خٹک نے انہیں راضی کر لیا‘ ان دونوں کا خیال تھا عمران خان ….مزید پڑھئے‎

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published.