اچھی نیند سے امراض قلب، کینسر اور جان لیوا امراض سے بچاؤ ممکن

14

مکوآنہ (این این آئی)ایک نئی طبی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ہر رات اچھی نیند سے امراض قلب، کینسر اور دیگر جان لیوا امراض سے خود کو بچایا جا سکتا ہے۔

ہارورڈ میڈیکل سکول کی تحقیق میں بتایا گیا کہ اچھی نیند دل اور جسمانی صحت کو بہتر بنانے میں اہم کردار ادا کرتی ہے اور زندگی کی مدت میں اضافہ کر سکتی ہے۔تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ نوجوانی سے اچھی نیند کو عادت بنانے سے قبل از وقت موت کا خطرہ کم ہو جاتا ہے، کسی بھی وجہ سے 8 فیصد اموات نیند کی کمی کا نتیجہ ہوتی ہیں۔اس تحقیق میں ایک لاکھ 72 ہزار سے زیادہ افراد سے 2013 سے 2018 کے دوران کیے گئے سروے کے ڈیٹا کی جانچ پڑتال کی گئی، 2018 کے بعد 4 سال تک ان افراد کی صحت کا جائزہ لیا گیا جس دوران 8681 افراد مختلف امراض کے باعث انتقال کر گئے۔تحقیق میں شامل افراد کی نیند کا جائزہ لینے کے بعد دریافت کیا گیا کہ اچھی نیند سے دل کی شریانوں سے جڑے امراض سے موت کا خطرہ 21 فیصد، کینسر سے موت کا خطرہ 19 فیصد جبکہ دیگر امراض سے موت کا خطرہ 40 فیصد تک کم ہو جاتا ہے۔اس تحقیق میں اچھی نیند کے 5 رویے بھی دریافت کیے گئے، ان رویوں میں 7 سے 8 گھنٹے کی نیند، سونے میں مشکلات کا سامنا نہ ہونا، بیدار ہونے کے بعد دوبارہ سونا، نیند میں مدد فراہم کرنے والی ادویات کا استعمال نہ کرنا اور بیدار ہونے کے بعد ذہنی اور جسمانی طور پر خود کو اچھا محسوس کرنا شامل ہے۔

محققین نے بتایا کہ اگر تمام افراد نیند کے لیے مثالی رویوں کو اپناتے ہیں تو ان کی زندگی کی مدت بھی بڑھ سکتی ہے، اگر آپ نیند کا معیار بہتر کرتے ہیں تو مختلف امراض سے متاثر ہونے یا ان سے موت کا خطرہ بھی گھٹ جاتا ہے۔تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ اچھی نیند کے نتیجے میں مردوں کی اوسط عمر میں 4.7 سال جبکہ خواتین کی اوسط عمر میں 2.4 سال کا اضافہ ہو جاتا ہے۔اس تحقیق کے نتائج امریکن کالج آف کارڈیالوجی کے سالانہ اجلاس کے دوران پیش کیے گئے۔

موضوعات:اچھی نیند

خودکش ایٹمی دھماکے

عمران خان کی پرویز خٹک اور صدر عارف علوی سے ناراضگی 18 مارچ کو سٹارٹ ہوئی‘ اسلام آباد کی ایڈیشنل سیشن کورٹ نے عمران خان کو18 مارچ کوطلب کر رکھا تھا‘ عمران خان اس دن بھی عدالت نہیں جانا چاہتے تھے لیکن صدر عارف علوی اور پرویز خٹک نے انہیں راضی کر لیا‘ ان دونوں کا خیال تھا عمران خان ….مزید پڑھئے‎

عمران خان کی پرویز خٹک اور صدر عارف علوی سے ناراضگی 18 مارچ کو سٹارٹ ہوئی‘ اسلام آباد کی ایڈیشنل سیشن کورٹ نے عمران خان کو18 مارچ کوطلب کر رکھا تھا‘ عمران خان اس دن بھی عدالت نہیں جانا چاہتے تھے لیکن صدر عارف علوی اور پرویز خٹک نے انہیں راضی کر لیا‘ ان دونوں کا خیال تھا عمران خان ….مزید پڑھئے‎

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published.