دھند کے باعث جج کو موٹروے پر روکنا پٹرولنگ افسران کا جرم بن گیا، دونوں معطل

28

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) شدید دھند کے باعث جج کو موٹروے پر جانے سے روکنے والے افسران کو معطل کر دیا گیا۔ڈان نیوز کے مطابق نیشنل ہائی وے اینڈ موٹروے پولیس کے ذرائع کا کہنا ہے کہ دھند کی وجہ سے سیالکوٹ-لاہور موٹروے روڈ کو تین دن قبل ٹریفک کے

لیے بند کر دیا گیا تھا۔گذشتہ صبح انسداد دہشت گردی عدالت کے جج اپنے پولیس اسکواڈ کے ہمراہ زبردستی رکاوٹ عبور کرکے موٹروے سڑک پر آ گئے۔نیشنل ہائی وے اینڈ موٹروے پولیس ہیڈ کوارٹر سے اطلاع ملنے پر شاکر علی اور حیدر علی نامی پٹرولنگ افسران نے دوسرے انٹرچینج پر جج کی گاڑی کو روکا اور زبردستی موٹروے پر داخل ہونے کے خلاف چالان کیا۔ڈان نیوز کے مطابق ایک پولیس اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ افسران کے روکنے پر جج کو غصہ آیا اور ان کو روکنے والے افسران کے خلاف سڑک پر عدالت لگا کر دہشتگردی کی دفعات کے تحت کارروائی کرنے کی دھمکی دی۔پولیس اہلکاروں نے ساتھی اہلکاروں کی معطلی کو بلا جواز قرار دیتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیا کہ معاملے کی انکوائری کرکے دونوں پٹرولنگ افسران سے انصاف کیا جائے، افسران صرف قانون پر عمل کر رہے تھے۔۔ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد صارفین کی جانب سے بھی جج کے رویے پر سخت ردعمل کا مظاہرہ سامنے آیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published.